نیا پاکستان ہاﺅسنگ سکیم میں خواجہ سرا بھی پیش پیش۔۔۔19لاکھ درخواستوں میں سے کتنی خواجہ سراﺅں کی نکلیں؟ حیرت کے جھٹکے کے لیے تیار ہوجائیں

 نیشنل ڈیٹا بیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی(نادرا)سے جاری ڈیٹا کے مطابق نیا پاکستان ہاﺅسنگ پروگرام کیلئے درخواست دینے والے 19 لاکھ سے زائد افراد میں ساڑھے 5 ہزار مخنث افراد بھی شامل ہیں۔درخواست گزاران میں 184،355 کچی آبادی کے رہائشی، 36،654 بیوائیں، 9،325 طلاق یافتہ خواتین اور مزدور طبقے سے تعلق رکھنے والے 715،473

افراد شامل ہیں۔ترجمان نادرا کے مطابق اب تک 19 لاکھ 18 ہزار نیا پاکستان ہاﺅسنگ پروگرام کے لیے رجسٹریشن کرواچکے ہیں جن میں سے 10 لاکھ سے زائد افراد نے آن لائن رجسٹریشن کی سہولت سے فائدہ اٹھایا۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے کہاہے کہ قوم کوعظیم بننے کے لئے کرپشن کے خلاف جہاد میں شریک ہونا ہوگا ، کرپشن کے خلاف موبائل ایپ میں ہر کوئی شرکت کرسکتاہے جب ہمارے نوجوانوں میں سمجھ آگئی کہ ہم انسداد کرپشن مہم میں شرکت کرکے ملک کی خدمت کررہے ہیں تو نیا پاکستان بن جائے گا ۔اسلام آباد میں انسداد بدعنوانی کے عالمی دن کے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان میں لوگوں کوپتہ ہی نہیں ہے کہ کرپشن کا اور ان کاکیا تعلق ہے ؟ ملک کا پیسہ جب چوری ہوتاہے تو اس کا نقصان پورے ملک کوہوتاہے ۔ انہوں نے کہا کہ بدعنوانی سے متعلق ایب لانچ کرکے بڑی خوشی ہوئی ہے۔ چائنہ کی معیشت بڑی تیزی سے آگے بڑھ رہی ہے ۔ چینی صدر کی مقبولیت کا راز یہ ہے کہ چین میں چارسو کے قریب وزیر کی سطح کے لوگوں کوجیل میں ڈالا گیاہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت بیروت، چلی اور عراق میں لوگ کرپشن کے خلاف باہرنکلے ہوئے ہیں۔ عوام کو اب آہستہ آہستہ احساس ہوگیاہے کہ کرپشن سے ان کا ملک آگے نہیں نکل سکتا ، جس قوم میں کرپشن نہیں ہے ، وہ اوپر ہے اوروسائل کے باوجود جس ملک میں کرپشن ہے ، وہ نیچے ہے ۔انہوں نے کہا کہ جب ایک معاشرے میں کرپشن بڑھ جاتی ہے تو جو پیسہ عوام پر خرچ ہونا ہوتاہے وہ جیبوں میں چلاجاتا ہے ، کرپٹ لوگ حکومت میں آکر پیسہ بناتے ہیں ، ان کوڈر ہوتاہے کہ پیسہ بینک میں رکھیں گے تو لوگوں کوپتہ چل جائے گا ، وہ پیسہ ملک سے باہر بھجوادیتے ہیں ۔ اس سے ملک کودگنا نقصان ہوتاہے کیونکہ وہ منی لانڈرنگ کے ذریعے پیسہ باہر بھجواتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پیسہ باہر بھجوانے سے ڈالر مہنگا ہوتاہے جس سے ہر چیز جو در آمد کرتے ہیں ، وہ مہنگی ہوجاتی ہے ۔وزیر اعظم کا کہناتھاکہ کرپٹ معاشروں میں سرمایہ کاری نہیں آتی ، ہمارا سب سے بڑااثاثہ بیرون ملک پاکستانی ہیں، اگر یہ پاکستانی اپنا پیسہ ملک میں لگانا شروع کردیں تو ملکی معیشت بہت مضبوط ہوجائےگی ۔ انہوں نے کہا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانی اپنا پیسہ اس لئے ملک میں نہیں لاتے کہ وہ کہتے ہیں کہ یہاں کرپشن ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملتان میں میٹرو کی ضرورت نہیں تھی لیکن بنادی اوراب وہ اربوں روپے کانقصان کررہی ہے، خالی چل رہی ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں