جی آیاں نوں۔۔۔۔عمران خان کے بلاوے پر نوجوت سنگھ سدھو کی پاکستان کب پہنچ رہے ہیں ؟تازہ ترین خبر

کرتار پور میں دنیا کے سب سے بڑے گردوارے کے افتتاح کی تیاریاں آخری مراحل میں داخل ہو گئی ہیں۔ وفاقی حکومت نے بھارت سے نوجوت سنگھ سدھو کو افتتاحی تقریب میں مدعو کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ سینیٹرفیصل جاوید نے کہا ہے کہ وزیراعظم 9 نومبر کوکرتارپور کے افتتاح سے تاریخ کاایک نیا باب رقم کریں گے۔وزیراعظم عمران خان کی خصوصی ہدایت پرسینیٹرفیصل جاوید نےنوجوت سنگھ سدھو سے رابطہ کیا اور 9 نومبر کو منعقد ہونے والی افتتاحی تقریب میں شرکت کی باضابطہ دعوت دی۔نوجوت سنگھ سدھو نے سینیٹر فیصل جاوید کے ذریعے بھجوائی جانے والی وزیراعظم عمران خان کی خصوصی دعوت قبول کرلی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ تاریخی تقریب میں مدعو کرنے پروزیراعظم پاکستان کا شکرگزار ہوں۔نوجوت سنگھ سدھو نے مزید کہا کہ دنیا بھر کے سکھ اپنےروحانی پیشواء بابا گرونانک سے وابستہ مقام کی زیارت کے منتظر ہیں،کرتار پورکی تعمیراور اس کےافتتاح نےسکھ مذہب کے کروڑوں پیروکاروں کو نہایت مثبت پیغام دیا ہے۔نوجوت سنگھ سدھو نے مزید کہا کہ 9 نومبر کی تقریب میں شرکت کی سعادت حاصل کروں گا،وزیراعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری کے موقع پر ملنے والی محبت اور مہمان نوازی کا لطف کبھی بھلا نہ پاؤں گا۔سینیٹر فیصل جاوید نے کہا کہ کرتار پور امن و محبت کی نئی علامت اور نئے پاکستان کا تحفہ ہے،نوجوت سنگھ سدھو کرتار پور منصوبے کے اہم کرداروں میں سے ایک ہیں، وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں قوم اور حکومت اپنے مہمانوں کو “چشم ماروشن دل ماشاد” کا پیغام دے رہے ہیں۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ گزشتہ روز بھارت نے کرتارپور راہداری کی افتتاحی تقریب میں شرکت کے لیے آنے والے 575 افراد کی فہرست پاکستانی حکام کو دی تھی جس میں نوجوت سنگھ سدھو کا نام نہیں تھا اور ممکنہ طور پر اس فہرست کو دیکھنے کے بعد ہی خصوصی طور پر سابق بھارتی کرکٹر کو مدعو کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ یاد رہے کہ خیال رہے گزشتہ برس اگست میں سابق بھارتی کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی دعوت پر وزیراعظم عمران خان کی تقریب حلف برداری میں شرکت کے لیے پاکستان آئے تھے۔ وہ اس تقریب میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے گلے بھی ملے تھے اور ان سے غیر رسمی گفتگو کی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں